محنت کشوں کے عالمی دن پر وزیر اعظم کا خصوصی پیغام

وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ پاکستان شکاگو کے ان کارکنوں کی لازوال جدو جہد کو خراج عقیدت پیش کرنے میں عالمی برادری کے ساتھ شامل ہے جنہوں نے اوقاتِ کار کے منصفانہ اور ایماندارانہ ماحول کے حصول کےلئے اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کیا جس سے مزدوروں اور کارکنوں کے بنیادی حقوق کی ادائیگی یقینی ہوگئی، آج ہم پاکستان اور دنیا بھر کے ان بہادر کارکنوں کو خراج عقیدت پیش کرتے ہیں اور محنت کی عظمت کے اپنے عزم کا اعادہ کرتے ہیں۔


محنت کشوں کے عالمی دن کے موقع پر اپنے پیغام میں وزیر اعظم نے کہا کہ ہر سال یکم مئی ہمیں یہ موقع فراہم کرتا ہے کہ ہم دنیا بھر کی اقوام کی ترقی و خوشحالی میں کارکنوں کے گراں قدر کردار اور قربانیوں کا اعتراف کریں۔ پاکستان کی ترقی میں فعال اور متحرک افرادی قوت ہی حقیقی محرک ہے۔ حکومت کا تیز تر اور پائیدار ترقی کا ہدف صرف ہماری محنتی، بے لوث اور کام سے لگن والی افرادی قوت کی وجہ سے ہی پورا ہو رہا ہے۔

وزیر اعظم نے کہا کہ میں اس موقع پر پاکستان بھر کے کارکنوں کو یقین دلاتا ہوں کہ وفاقی حکومت نے ہمیشہ مزدور دوست پالیسیاں اپنانے پر زور دیا ہے اور آئندہ بھی ہم نے صوبائی حکومتوں کے تعاون سے ایسے تمام ورکرز دوست اقدامات کرنے کا پختہ عزم کر رکھا ہے جن کی بدولت کارکنوں اور ان کے اہل خانہ کی فلاح و بہبود کے ساتھ ساتھ ان کا معیار زندگی بھی بہتر بنایا جا سکے۔ ہم بڑی اچھی طرح سمجھتے ہیں کہ صرف صحت مند، خوش و خرم، تعلیم یافتہ اور اچھی آمدن والی افرادی قوت سے پاکستان اس قابل ہو جائے گا کہ وہ سماجی و اقتصادی طور پر طاقتور ہو جائے اور یہی وہ چیز ہے جس کےلئے ہم پر خلوص نیت سے کام کر رہے ہیں۔

وزیر اعظم نے کہا کہ کارکن اور آجر قومی ترقی کی ان کوششوں میں شراکت دار ہیں اور میں سب پر زور دیتا ہوں کہ وہ خود کو جدید ترین پیداواری ٹیکنالوجیز سے آراستہ کریں تاکہ ہم عالمی چیلنجز کے ساتھ ساتھ چل سکیں اور عالمی مارکیٹوں میں بڑھتی ہوئی مسابقت کا کامیابی سے سامنا کر سکیں۔

وزیر اعظم نے کہا کہ بحیثیت وزیر اعظم پاکستان میں خود اور حکومت کی طرف سے پاکستان بھر کے مزدوروں اور ہنر مندوں کو دل کی گہرائیوں سے مبارکباد دیتا ہوں اور ان کے لئے نیک خواہشات کا اظہار کرتا ہوں اور عوام کے جملہ حقوق کے تحفظ کے حکومتی عزم کا اعادہ کرتے ہوئے عوام کی اجتماعی فلاح و بہبود کے لئے کام کرنے کا عہد کرتا ہوں کیونکہ ایسا کرنے ہی سے پاکستان اقوام عالم میں اپنا جائز مقام حاصل کر سکے گا۔ اے پی پی

This post is shared by PakPattani.com For Information Purpose Only

اپنا تبصرہ بھیجیں