افغانستان میں بی بی سی کے نامہ نگار احمد شاہ ہلاک

Image caption احمد شاہ ایک سال سے زائد عرصے سے بی بی سی کے ساتھ تھے

افغانستان کے مشرقی صوبے خوست میں میڈیا پر ہونے والے حملے میں میں بی بی سی کے نامہ نگار احمد شاہ ہلاک ہو گئے ہیں۔

احمد شاہ ایک سال سے زائد عرصے سے بی بی سی کی افغان سروس کے ساتھ کام کر رہے تھے۔

بی بی سی ورلڈ سروس کے ڈائریکٹر جیمی ایگنس نے ایک بیان میں کہا کہ احمد شاہ ایک ’قابلِ احترام اور مقبول‘ صحافی تھے۔

اسی بارے میں

کابل: دو دھماکوں میں صحافیوں سمیت 25 افراد ہلاک

ان کا مزید کہنا تھا کہ ’یہ ایک المناک نقصان ہے اور میں احمد شاہ کے خاندان، دوستوں بی بی سی افغان کی پوری ٹیم سے تعزیت کرتا ہوں۔‘

’ہم اس مشکل وقت میں ان کے خاندان کی مدد کے لیے جو کچھ کر سکتے ہیں کر رہے ہیں۔‘

خوشت کے پولیس سربراہ عبدالحنان نے بی بی سی افغان کو بتایا کہ احمد شاہ کو نامعلوم شخص نے گولی ماری۔ پولیس قتل کے محرکات کی تحقیقات کر رہی ہے۔

مقامی افراد نے بی بی سی کو بتایا کہ احمد شاہ اپنے موٹر سائیکل پر جا رہے تھے جب یہ واقعہ پیش آیا۔

پیر کو افغانستان میں دو اور حملے کیے گئے۔ کابل میں بم دھماکے میں 25 افراد ہلاک ہوئے جن میں آٹھ صحافی اور چار پولیس اہلکار شامل تھے۔ اس حملے میں 45 افراد زخمی ہوئے۔

قندھار میں ہونے والے خودکش حملے میں سکول کے 11 طلبا مارے گئے جبکہ متعدد زخمی ہوئے۔

گذشتہ برس رپورٹرز ود آؤٹ بارڈرز افغانستان کو صحافیوں کے لیے تیسرا سب سے خطرناک ملک قرار دیا تھا۔

گذشتہ برس جون میں افغان سروس کا ڈائیور محمد نذیر بھی ایک بم حملے میں مارا گیا تھا۔

اس حملے میں 400 افراد زخمی اور 150 لوگ ہلاک ہوئے تھے۔

This post is shared by PakPattani.com For Information Purpose Only

اپنا تبصرہ بھیجیں