حکومت ایم ایم اے کے حوالے کردو کرپشن خود ختم ہوجائے گی: فضل الرحمان

مردان: متحدہ مجلس عمل اور جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ حکومت ایم ایم اے کے حوالے کردو کرپشن خود ختم ہوجائے گی، جن کو قرآن وسنت کا علم نہیں وہ حکمران بن جاتے ہیں۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے مردان میں جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کیا، مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ پاکستان میں قانون سازی بین الاقوامی دباؤ میں ہوتی ہے، اسلامی نظریاتی کونسل 1973 میں بنی لیکن آج تک ایک سفارش پر بھی عمل نہیں ہوا، آئین کہتا ہے قانون سازی قرآن وسنت کے مطابق ہونی چاہیے۔

انہوں نے کہا کہ 98 فیصد عوام نے قرآن کے مطابق قانون سازی کی حمایت کی ہے، بندوق کا زمانہ گزر گیا، اب اقتدار تک رسائی ووٹ نے لے لی ہے، اب آپ کے ووٹ کی پرچی بندوق بھی ہے اور تلوار بھی، 5 سال تک پارلیمنٹ میں باطل عقائد ونظریات کا مقابلہ کیا۔

آج خیبرپختونخواہ میں سب سے زیادہ کرپشن ہے: مولانا فضل الرحمان

سربراہ جے یو آئی (ف) کا کہنا تھا کہ ہم پاکستان اور آئین کے ساتھ کھڑے رہے، ایسی پالیسی اختیار کی جس سے مسلح لوگوں کے حوصلے پست ہوئے، لبرل وسیکولر لابی مذہبی شناخت کو ختم کرنا چاہتی ہے، کوئی مائی کا لعل اس کو ختم نہیں کرسکتا، ہمارا نوجوان اور مدارس زندہ ہیں تو یہ شناخت کبھی ختم نہیں ہوسکتی۔

مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ اقوام متحدہ کشمیریوں کو حق خوداردیت نہیں دے سکتا، اقوام متحدہ کی چھتری تلے شام میں مسلمانوں کا قتل عام ہورہا ہے، ہم پاکستان میں مغرب کے ایجنڈے کو نافذ نہیں ہونے دیں گے، طویل مدت سے ملک میں کرپشن کے تماشے دیکھ رہے ہیں۔

ریاست، ملک کے نظام پر مذہب بیزار قوتوں کا قبضہ ہے، مولانا فضل الرحمان

ان کا مزید کہنا تھا کہ حکمرانوں کو کچھ نہیں پتہ، وہ عدالتوں میں گھسیٹے جارہے ہیں، ادارے خود حقیقی معنوں میں حکمران بنے ہوئے ہیں، کمزور حکومت کبھی ملک کو ترقی نہیں دے سکتی، ہماری سیاست اور پارلیمنٹ بین الاقوامی دباؤ میں رہتی ہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

This post is shared by PakPattani.com For Information Purpose Only

اپنا تبصرہ بھیجیں